دلت برادری کے 300 افراد نے ہندو مذہب ترک کرکے بدھ مذہب اختیار کرلیا

گجرات : ہندو انتہا پسندوں کے دلت برادری پر ظلم وستم کا سلسلہ جاری ہے،برابری اور وقار کے لیے دلت برادری کے تین سو افراد نے ہندو مذہب ترک کر کے بدھ مذہب اختیار کر لیا ۔

تفصیلات کے مطابق دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت ہونے کے دعوے دار بھارت میں ہندو انتہاپسندوں کا راج ہے، شدت پسند ہندوؤں کے ظلم و ستم سے تنگ آکر لوگ مذہب بدلنے لگے۔

بھارتی ریاست گجرات کے گاؤں میں تین سو دلتوں نے ذات پات کی بنیاد پر تفریق اور تشدد کے خلاف ہندو مذہب ترک کر کے بدھ مذہب اختیار کر لیا۔

مذہب تبدیل کرنےوالوں میں نچلی ذات کے وہ افراد بھی شامل ہیں، جنہیں دو سال قبل اونچی ذات کے ہندوؤں نے گائے کی کھال اتارنے کی پاداش میں پورے شہر میں گھما کر سرعام کوڑے مارے تھے۔

اس واقعے کے متاثرین کا کہنا ہے دو برس گزر چکے ہیں لیکن حکومت نے کوئی مدد نہیں کی، ہمیں انصاف نہیں ملا۔ ہم برابری اور وقار کے لیے ہندو مذہب ترک کر رہے ہیں۔

مذہب تبدیل کرنےوالوں کا کہنا ہے کہ مودی سرکار کی آمد کیساتھ ہی انتہا پسند ہندوؤں کا اثر و رسوخ بڑھ گیا ہے اور انہیں مسلسل تفریق، ذلت اور ظلم کا سامنا ہے۔

یاد رہے 2016 میں بھی بھارتی صوبے گجرات میں اونچی ذات کے ہندوئوں کے ظلم و ستم سے پریشان دلت ذات کے 2 ہزار سے زائد ہندوؤں نے بدھ مت مذہب قبول کیا تھا۔

واضح رہے کہ بھارت بھر میں دلت برداری کو اونچی ذات کے ہندوؤں کے ظلم و ستم اور ناانصافی کا سامنا ہے، حالیہ دنوں میں دلت برادری کے خلاف ہونے والے پرتشدد واقعات کے سبب دلت برادری میں شدید اشتعال پایا جاتا ہے۔

شیئر کریں:

Facebook

Get the Facebook Likebox Slider Pro for WordPress