خواجہ سراؤں کو شناختی کارڈ کی فراہمی سے متعلق چیف جسٹس نے کمیٹی قائم کردی

لاہور: چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے خواجہ سراؤں کو شناختی کارڈ جاری نہ کرنے سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران ایک کمیٹی قائم کرتے ہوئے فوری طور پر سفارشات طلب کرلیں۔

عدالتی حکم پر کمیٹی نے اپنی سفارشات سپریم کورٹ میں پیش کردیں، جس کے مطابق خواجہ سراؤں کے شناختی کارڈز 7 دن میں مفت بنائے جائیں گے اور عدالتی فیصلے پر عملدرآمد کے لیے صوبائی اور ضلعی سطح پر40 کمیٹیاں قائم کی جائیں گی۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ خواجہ سراؤں کے مسائل کو اجاگر کرنے کے لیے ورکشاپ منعقد کی جائے، جس کے لیے کمیٹی کو لاء اینڈ جسٹس کمیشن کا پلیٹ فارم مہیا کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے عیدالفطر کے پہلے روز لاہور کے فاؤنٹین ہاؤس کے دورے کے موقع پر خواجہ سراؤں کی جانب سے انہیں شناختی کارڈ جاری نہ کرنے کی شکایت پر ازخود نوٹس لیتے ہوئے چیف سیکریٹری پنجاب اور متعلقہ حکام سمیت اخوت فاؤنڈیشن کے امجد ثاقب کو آج طلب کیا تھا۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 2 رکنی بینچ نے آج لاہور رجسٹری میں خواجہ سراؤں کو شناختی کارڈ جاری نہ کرنے سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے خواجہ سراؤں کو شناختی کارڈ کی فراہمی سے متعلق کمیٹی قائم کرتے ہوئے فوری طور پر سفارشات طلب کرلیں۔

شیئر کریں:

Facebook

Get the Facebook Likebox Slider Pro for WordPress