امریکی اسکول میں جاں بحق ہونے والی طالبہ سبیکا کے گھر وزیراعظم کی آمد

کراچی: وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے امریکی ریاست ٹیکساس کے ہائی اسکول میں فائرنگ کے نتیجے میں جاں بحق ہونے والی طالبہ سبیکا کے گھر کا دورہ کیا اور ان کے والد سے تعزیت کی۔

اس موقع پر وزیراعظم نے کہا کہ سبیکا پاکستان کی ہونہار طالبہ تھی، پوری قوم ان کی افسوس ناک موت پر سوگوار ہے۔

انہوں نے کہا کہ انتہا پسندانہ رجحانات کسی ایک ملک یا خطے کا نہیں بلکہ بین الاقوامی مسئلہ ہے، مسئلے پر قابو پانے کے لیے ان کے اسباب کے تدارک کی ضرورت ہے۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ بین الاقوامی سطح پر ایک دوسرے کے تجربات سے استفادہ کرنے کی بھی ضرورت ہے۔

اس موقع پر گورنر سندھ محمد زبیر بھی وزیراعظم کے ہمراہ موجود تھے۔

17 سالہ سبیکا عزیز شیخ امریکی محکمہ خارجہ کی جانب سے کینیڈی لوگریوتھ ایکسچینج اینڈ اسٹڈی اسکالر شپ پروگرام کے تحت گزشتہ برس 21 اگست کو 10 ماہ کے لیے امریکا گئی تھیں اور 9 جون کو انہیں وطن واپس آنا تھا۔

وہ ٹیکساس کے شہر سانتافی کے ایک ہائی اسکول میں زیر تعلیم تھیں، جہاں جمعہ (18 مئی) کو اسکول کے ہی ایک طالب علم کی فائرنگ سے وہ چل بسیں۔

فائرنگ کے نتیجے میں 9 طالب علموں اور ایک استاد سمیت 10 دیگر افراد بھی ہلاک ہوئے تھے۔

کینسر کیئر اسپتال کیلئے 10 کروڑ روپے عطیے کا اعلان
اس سے قبل وزیراعظم نے کینسر کیئر اسپتال کی فنڈ ریزنگ کی تقریب سے خطاب کے دوران کہا کہ اس جان لیوا مرض کے بچاؤ کیلئے موجودہ سہولیات ناکافی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کراچی کا کینسر کیئر اسپتال بہترین سہولتیں فراہم کررہا ہے، کینسر سے بچاؤ اور معالجے کیلیے اسپتال کو زیادہ سے زیادہ عطیات دیں۔

انہوں نے کہا کہ امید ہے کہ مخیر حضرات کینسر کے علاج کیلیے کارخیر حصہ میں ڈالیں گے، تمام افراد تک سہولیات پہنچانے کیلیے مزید وسائل درکار ہیں۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ توقع ہے انتظامیہ کینسر کنٹرول پروگرام کیلئے بھی اقدامات کرے گی، نجی شعبوں کے ساتھ شراکت داری سے وسائل کے مسئلے پر قابو پایا جاسکتا ہے۔

اس موقع پر انہوں نے حکومت پاکستان کی طرف سے کینسر کیئر اسپتال کیلیے 10کروڑ روپے عطیے کا بھی اعلان کیا۔

شیئر کریں:

Facebook

Get the Facebook Likebox Slider Pro for WordPress